Photo Credit Neo Tv

اب لوٹوں کی دال نہیں گلنے والی ،مریم نواز
02 May 2018 (22:21) 2018-05-02

صادق آباد:مسلم لیگ (ن) کی رہنما اور سابق وزیراعظم نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہاہے کہ جلسہ وی صادق آباد دا، مجمع وی صادق آباد دا، لیڈر عوام دا تے ایجنڈا پاکستان دا۔ ہور کرونااہل ۔ لوکاں تے ضدای لالئی اے،عوام نوازشریف کے ساتھ ہونے والی ناانصافی کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں ،کیوں ایسے ناانصافی پر مبنی فیصلے کرتے ہو،کیوں کسی پر ظلم کرتے ہو،کرپشن ایک پائی بھی ثابت نہ ہونا اسکا جرم بن جاتا ہے اور دوسری طرف جسکو آجکل آپ نے لاڈلہ بنا رکھا ہے اسکے جعلی کاغذات بھی اسکے راستے میں رکاوٹ نہیں بنتے ، اسکی جعلی سازی بھی رکاوٹ نہیں بنتی اسکی نیازی آف شور کمپنی بھی رکاوٹ نہیں ،اس کیلئے جے آئی ٹی نہیں بنتی ہے ، ہم احتساب نامی انتقام کا 2سال سے سامنا کررہے ہیں۔

ایک جہانگیر ترین ہے جسکی کرپشن ثابت بھی ہوگئی مگر اسکے مقدمے میں نیب کو تکلیف نہیں دی گئی آپ کا لیڈر اور آپکی بہن 70پیشیاں بھگت چکے ہیں،پارٹیاں چھوڑ کر جانے والوں کا وہ حال ہوگا کہ آئندہ لوگ پارٹی چھوڑنے سے پہلے دس مرتبہ سوچیں گے۔وہ بدھ کو کو صادق آباد میں عوامی جلسے سے خطاب کررہی تھیں۔ سابق وزیر اعظم کی بیٹی مریم نواز نے کہا کہ یہاں کے لوگوں کی طرف سے والہانہ استقبال پر شکر گزار ہوں، جلسہ وی صادق آباد دا، مجمع وی صادق آباد دا، لیڈر عوام دا تے ایجنڈا پاکستان دا۔ ہور کرونااہل ۔ لوکاں تے ضدای لالئی اے۔ انہوں نے کہا کہ کسی ٹی وی چینل نے نہیں دکھایا مگر وزیرخارجہ نااہلی کے بعد کل جب واپس سیالکوٹ پہنچے تو پورا کا پورا سیالکوٹ انکے استقبال کیلئے امڈ آیا تھا۔ سیالکوٹ کے عوام ناانصافی کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں۔

صادق آباد کے لوگوں کے جذبے کو سلام پیش کرتی ہوں۔ یہاں کے لوگ بھی ناانصافی کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں ۔ مریم نوازنے کہا کہ خواجہ آصف نے میاں نواز شریف اور پاکستان سے وفا نبھائی ہے او رلوگ وفادار لوگوں کی قدر کرتے ہیں۔ اس دفعہ پنجاب کا موڈ بتا رہا ہے کہ لوٹوں کی دال نہیں گلنے والی ۔ لوگوں کا موڈ مجھے بتا رہا ہے کہ لوگوں نے نواز شریف کی اپنی ضد بنا لیا ہے آپ لوگ نواز شریف کے خلاف ہونیوالی زیادتی کرکے خلاف کھڑے ہو۔ اس بار پارٹیاں چھوڑ کر جانے والوں کا وہ حال ہوگا کہ آئندہ لوگ پارٹی چھوڑنے سے پہلے دس مرتبہ سوچیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بیٹے سے تنخواہ نہ لینے اور ویزہ رکھنے پر نااہل صادق آباد کو منظور ہے یا نہیں ۔ کیا قصور تھا نواز شریف کا ؟ کیا نواز شریف کا یہی قصور تھا کہ اس نے اوپر والوں سے آرڈر لینے اور جھکنے سے انکار کردیا؟ کیانواز شریف کا یہ قصور تھا کہ جو طاقت اسکو عوام اور ووٹ کی پرچی نے دی اس پر سے ڈکٹیشن لینے سے انکار کردیااور اسنے کہا کہ صرف خدا کے آگے جھکوں گا اور عوام کی بات مانوں گا۔ مریم نواز شریف نے کہا کہ آپکے 3دفعہ منتخب وزیراعظم کو صرف اسی لیئے نکال دیا کہ کیونکہ اس کے پاس دبئی کا ویزہ تھا۔

یہ اس لیے کہ رکھا کہ مشرف نے خاندان سمیت نواز شریف کو ملک سے نکال دیا تو اس کو وہاں رہنے کیلئے ویزہ تو چاہیے تھا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کا موڈ بتا رہا ہے کہ لوگوں کی دال نہیں گلے گی۔ اپنے ملک سے نکالے جانے کے بعد کہیں تو نواز شریف نے جا کر رہنا تھا یا وہ کسی اور سیارے پر جاکر رہائش اختیار کرلیتا ۔ جہاں پر جاکر رہنا تھا وہاں کا ویزہ بھی تو چاہیے تھا۔ جس نے آپکے لیڈر کو ملک سے باہر نکالا پوچھنا اس سے چاہیے تھا اسکی جگہ پوچھا اس سے جارہا ہے جس پر ظلم ہوا اورجسکو ملک سے نکالا گیا۔ظالم سے کوئی سوال نہیں کرتا ۔ مریم نواز نے کہا کہ کیوں ایسے ناانصافی پر مبنی فیصلے کرتے ہو۔ کیوں کسی پر ظلم کرتے ہو۔

کرپشن ایک پائی بھی ثابت نہ ہونا اسکا جرم بن جاتا ہے اور دوسری طرف جسکو آجکل آپ نے لاڈلہ بنا رکھا ہے اسکے جعلی کاغذات بھی اسکے راستے میں رکاوٹ نہیں بنتے ۔ اسکی جعلی سازی بھی رکاوٹ نہیں بنتی اسکی نیازی آف شور کمپنی بھی رکاوٹ نہیں ہے اس کیلئے جے آئی ٹی نہیں بنتی ہے۔ مریم نواز نے کہا کہ ہم نے احتساب نامی انتقام کا 2سال سے سامنا کررہے ہیں۔ ایک جہانگیر ترین ہے جسکی کرپشن ثابت بھی ہوگئی مگر اسکے مقدمے میں نیب کو تکلیف نہیں دی گئی آپ کا لیڈر اور آپکی بہن 70پیشیاں بھگت چکے ہیں۔


ای پیپر