PTI members abducted, Khurram Sher Zaman, Sindh, Government, PPP
کیپشن:   فائل فوٹو
02 مارچ 2021 (08:01) 2021-03-02

کراچی: سندھ اسمبلی میں تحریک انصاف کے ممبر خرم شیر زمان نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کی جماعت کے 3 اراکین کو اغوا کیا جا چکا ہے۔ اغوا ہونے والے اراکین کے فون بند ہیں، ان کے ساتھ گزشتہ دور روز سے کسی کا رابطہ نہیں ہو رہا۔

خرم شیر زمان نے یہ دعویٰ گزشتہ روز میڈیا نمائندوں سے گفتگو میں کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ تینوں اراکین اسمبلی کی آخری لوکیشن مختلف مقامات پر آ رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ان تینوں کی آخری لوکیشن زمزمہ، ڈیفنس فیز ٹو اور خیابان شمشیر ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے دعویٰ کیا کہ اغوا ہونے والے اراکین پر سینیٹ الیکشن کے حوالے سے بہت زیادہ دباؤ تھا۔ یہ بات اغوا ہونے ان تینوں نے اپنے ساتھی اراکین کو بتائی تھی کہ انھیں مختلف سیاسی جماعتوں کی جانب سے پیشکشیں قبول نہ کرنے کی وجہ سے دھمکایا جا رہا ہے۔

خرم شیر زمان نے الزام عائد کیا کہ اس سارے کھیل کے پیچھے حکومت سندھ ہے۔ ہمیں اس بات کا بھی یقیم ہے کہ کرم بخش گبول کا ویڈیو ان سے زبردستی لیا گیا ہے۔ سندھ میں بھی چھانگا مانگا طرز کی سیاست شروع کر دی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر ہمارے کسی بھی رکن کو کچھ ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری سندھ حکومت، وزیراعلیٰ مراد علی شاہ، آصف علی زرداری اور حکمران جماعت پیپلز پارٹی پر عائد ہوگی۔


ای پیپر