وفاقی وزرا نے سیاست دانوں کا نیا پنڈورا باکس کھو ل دیا
02 جولائی 2020 (20:10) 2020-07-02

اسلام آباد: شبلی فراز، علی زیدی اور شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ ماضی میں پی آئی اے میں ہونے والے ڈراموں کا پوری قوم کو علم ہے، اداروں کی تباہی میں سیاست دانوں کا بڑا ہاتھ، مشاہد اللہ خان نے ایئر لائنز میں اپنے رشتہ دار لگائے، تحقیقات کے دوران ہر جگہ کرپٹ عناصر کی موجودگی کا انکشاف ہوا۔

وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی کا پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سابق ادوار میں ہر ادارے کو تباہ کیا گیا۔ ہماری حکومت نے تحقیقات شروع کرائیں تو پتا چلا کہ ہر ادارے میں کرپٹ عناصر ہیں۔ اداروں کو تباہ کرنے میں سیاست دانوں کا بڑا ہاتھ ہے۔ انہوں نے پی آئی اے میں جو ڈرامے کئے اس کا پوری قوم کو پتا ہے،اب قومی ائیر لائن سے گندے انڈے نکالیں گے ، وعدہ ہے چند ماہ میں سول ایوی ایشن اتھارٹی دنیا کی ٹاپ اتھارٹی بن جائے گی۔

علی زیدی کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت عوامی ہے، بے قاعدگیاں چھپا نہیں سکتے۔ کیا یہ دانشمندانہ فیصلہ ہوتا کہ ہم حقیقت چھپا کر رکھتے۔ تھوڑی تکلیف برداشت کرنا ہمارے مستقبل کے لیے ضروری ہے۔ پائلٹ کا معاملہ سیفٹی کا ایشو ہے، سسٹم کو شفاف بنائیں گے۔

ہماری حکومت کی اولین ترجیح مسافروں کا تحفظ ہے،ان کا کہنا تھا کہ عزیر بلوچ کی جے آئی ٹی میں لکھا ہے کہ ہم سے قتل کرائے جاتے تھے۔ یہ حکومت جے آئی ٹی چھپانے والی حکومت نہیں، ہم کھل کر بتاتے ہیں کہ عوام سے کس نے زیادتیاں کیں۔ ہمارا وعدہ ہے، انکوائری کو جلد نمٹا دیں گے۔


ای پیپر