Kashmala Tariq Expose
02 فروری 2021 (19:33) 2021-02-02

اسلام آباد : وفاقی محتسب برائے خواتین ہراسانی کشمالہ طارق نے گزشتہ رات ہونے والے کارحادثے سے متعلق حقائق سے پردہ اُٹھاتے ہوئے کہا کہ کل کاحادثہ بہت بھیانک تھا،خاونداوربیٹےپرلگنےوالےالزامات بےبنیادہیں، قانون اپناراستہ ضروربنائےلیکن ہم پرالزامات نہ لگائےجائیں۔

کشمالہ طارق نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا گزشتہ راز پیش آنے والے حادثے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا گزشتہ رات ساڑھے10بجےٹول پلازہ کراس کیا،ہم 2گاڑیوں میں لاہورسےآرہےتھے، ایک گاڑی میں میرےخاونداورمیں،دوسری میں میرابیٹاتھا، سمجھ سے باہر ہے یہ کس قسم کا میڈیا ٹرائل ہے کیونکہ گزشتہ رات ہونے والے واقعے کے بعد میرے بیٹے کی تصویریں دکھائی جا رہی ہیں جبکہ وہ پچھلی گاڑی پر تھا ،کشمالہ طارق نے بتایا کہ ڈرائیور سے گاڑی کنٹرول نہیں ہوئی اور خوفناک حادثہ پیش آ گیا،زورسےجھٹکالگاتوہم آگےوالی سیٹوں پرگرپڑے،انہوں نے کہا  4قیمتی جانیں چلی گئیں میں نےان کیلئےبہت دعائیں کیں۔

کشمالہ طارق کا کہنا تھا کہ حادثہ انتہائی بھیانک تھا ،چار قیمتی جانیں چلی گئیں ،لیکن خاوند اور بیٹے پر الزام بالکل غلط ہے ،انہوں نے کہا ہم پر الزامات نہ لگائے جائیں ،قانون اپنا راستہ ضرور بنائے ، تکلیف دہ بات ہےایک خاندان کااتنابڑانقصان ہوگیا،میرےپاس ان ماؤں کےساتھ تعزیت کرنےکیلئےالفاظ نہیں،ان کا مزید کہنا تھا کہ انصاف ہو گا لیکن نہ حق کسی بچے کو نہ لپیٹیں اگر ہمارا قصور ہے یا ہم ڈرائیو کر رہے تھے تو ہاتھ جوڑ کر معافی مانگیں گے۔


ای پیپر