CAA,fake licences,Civil Aviation Authority,pilots,Pakistan
02 فروری 2021 (10:27) 2021-02-02

اسلام آباد :پاکستان سوی ایوی ایشن اتھارٹی کے حکام پر رشوت لیکر جعلی لائسنس ایشو کرنے کے الزامات ٗامتحانات میں کسی اور کو بٹھایا جاتا تھا۔ لائسنس برانچ کے عہدیداروں کیخلاف گھیرا تنگ ٗ ایف آئی آر درج کرنے کا فیصلہ

پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کی طرف سے پائلٹس کیلئے جعلی لائسنس کیس میں مزید تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ ایک نجی ٹی وی نے اپنی رپورٹ میں ایف آئی اے کے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ سی اے اے کے اعلیٰ حکام کے فرنٹ مین لاکھوں روپے کی رشوت کے بدلے اپنے فرنٹ مین کے ذریعے پائلٹس کے جعلی لائسنس جاری کرتے تھے اور اس طریقہ کار میں وہ بھاری رشوت کے عوض امتحانات میں کسی دوسرے شخص کو بٹھا کر پاس کروا دیا کرتے تھے۔

سی اے اے حکام کی اس مبینہ کرپشن کے دو مرکزی ملزمان کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جا رہے ہیں اور جو افسران فرنٹ مین کے ذریعے رشوت لینے رہے ہیں ان کیخلاف بھی گھیرا تنگ کر لیا گیا ہے ۔اس سلسلہ میں سی اے اے لائسنس برانچ کے عہدیداروں اور پائلٹوں کا ریمانڈ بھی حاصل کر لیا گیا ہے اور تحقیقات کا دائرہ وسیع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ یہ بھی اطلاعات ہیں کہ ان کرپٹ عناصر کیخلاف ایف آئی آر درج کروائی جانے کا امکان ہے۔


ای پیپر