Gilgit-Baltistan, province, Imran Khan, GB cabinet, oath
02 دسمبر 2020 (13:33) 2020-12-02

گلگت: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پراونشل اسٹیٹس کے حوالے سے فوری کام کریں گے تاکہ احساس محرومی دور ہوسکے۔

گلگت بلتستان کابینہ کی حلف برداری تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ وزیراعلیٰ گلگت بلتستان اور کابینہ کو منتخب ہونے پر مبارکباد دیتا ہوں، انہوں نے کہا کہ کسی وزیراعظم نے گلگت بلتستان کو ایسے نہیں دیکھا جیسے میں دیکھا ہوں۔

عمران خان نے کہا کہ جس راستے پر گلگت بلتستان کو ڈالیں گے اس سے عوام کی زندگی بدل جائے گی، انہوں نے کہا کہ امید ہے گلگت بلتستان حکومت نئے معیار پر گورننس کرے گی۔

وزیراعظم نے کہا کہ گلگت بلتستان کے علاقوں سے واقف اور مسائل سے پوری طرح آگاہ ہوں۔ گلگت بلتستان کے مسائل اور صلاحیتوں سے بخوبی واقف ہوں۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کو صوبے کی حیثیت دینے کیلئے فوری کام شروع کیا جائے گا، گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کیلئے کمیٹی بنائیں گے۔

عمران خان نے کہا کہ یہاں کے عوام کو بہتر معلوم ہے گلگت بلتستان کو کیسے بہتر بنایا جاسکتا ہے۔ گلگت بلتستان کے عوام کی زندگی کو بہتر بنانے کیلئے بھرپور کوشش کریں گے۔ گلگت بلتستان حکومت ایک نئی روایت قائم کرے گی، دنیا کے سب سے بہترین نظام سیلف گورننس کی بنیاد پر قائم ہوتے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ مدینہ کی ریاست میں پہلی ترجیح کمزور طبقے کو ترقی دینا تھا، حکومت کی ترجیح کمزور طبقے کو ترقی دینا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں احساس پروگرام لے کر آ رہے ہیں، گلگت کو احساس پروگرام کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔ گلگت بلتستان کے لوگوں کیلئے صحت کارڈ لے کر آ رہے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ گلگت بلتستان میں سیاحت کے حوالے سے پورا زور لگائیں گے، گلگت بلتستان میں سیاحت کو فروغ دیں گے، گلگت بلتستان کے عوام کو سستے قرضے دیں گے۔ یہاں کے عوام اپنے گھروں کے ساتھ گیسٹ ہاؤس بنائیں اور کاروبار کریں۔

وزیراعظم نے کہا کہ لیڈر شپ کی خصوصیات میں صادق اور امین ہونا ضروری ہے، قائداعظم محمد علی جناح کو اپنا لیڈر مانتا ہوں۔ ایک جھوٹ کو چھپانے کیلئے 100 جھوٹ بولنا پڑتے ہیں، حرام کا پیسہ اللہ کی لعنت ہے۔ ایسے پیسے کا کیا فائدہ جو آپ کو دنیا بھر میں بے عزت کرا دے۔

انہوں نے کہا کہ یہ اور ان کی اولادیں اپنی چوری کا پیسہ بچانے کیلئے جھوٹ بول رہے ہیں۔ نواز شریف اور آصف زرداری کو 40 سال سے جانتا ہوں، ان دونوں پر اللہ تعالیٰ کا عذاب نازل ہوتے ہوئے دیکھا ہے۔ یہ چوری کا پیسہ بچانے کیلئے کبھی لندن اور کبھی دبئی جا رہے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ کل اسحاق ڈار نے جس طرح انٹرویو دیا اس میں ذہنی دباؤ واضح نظر آ رہا تھا، اسحاق ڈار کو دل کا مسئلہ نہیں تو وہ بھی ہو جانا تھا۔


ای پیپر