Sikhs, Indian consulate, New York, slogans, Modi
02 دسمبر 2020 (09:02) 2020-12-02

نیویارک: سکھوں کا نیویارک میں بھارتی قونصل خانے کا گھیراؤ، تمام رکاوٹیں توڑ کر قونصلیٹ کے باہر جمع ہوگئے ، مودی حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی ، سکھ کمیونٹی بھارت میں اقلیتوں سے ناروا سلوک اور مودی حکومت کی کسان مخالف پالیسیوں کے خلاف مظاہرہ کر رہے تھے۔

قونصلیٹ کے مرکزی دروازے بند کر دیئے گئے جبکہ پولیس نے عمارت کو گھیرے میں لے لیا۔

یاد رہے کہ بھارت میں زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج چھٹے روز بھی جاری ہے۔

 کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کی جانب سے بھارتی کسانوں کی حمایت سے متعلق بیان پر نریندر مودی کی حکومت سیخ پا ہو گئی۔

ادھر وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے بھارتی کسانوں کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ مودی سرکار کو کسانوں کے حقوق کا خیال رکھنا چاہیے۔ جسٹن ٹروڈو کے بیان پر بی جے پی آگ بگولہ ہو گئی ہے۔ بی جے پی کے رہنماوں نے کینیڈا کے وزیراعظم کے بیان کو بھارت کے اندرونی معاملات میں مداخلت قرار دیا ہے۔

خیال رہے کہ بھارت میں مودی سرکار ایسے متنازعہ قوانین بنا رہی ہے جو اقلیتوں کے حق میں نہیں ہے۔ کسانوں کا احتجاج بھارت کی ریاست پنجاب ، ہریانہ ، دلی ، راجستھان اور اتر پردیش میں جاری ہے۔

 واضح رہے کہ مودی سرکار جب سے حکمت میں آئی ہے بی جے پی نے انتہا پسند ہندوؤں کو خوش کرنے کے لیے ایسے قوانین متعارف کروائے جن کی اقلیتوں نے کھل کر مخالفت کی۔

اس سے قبل مودی سرکار کی جانب سے شہریت کا متنازعہ قانون پاس کروایا گیا، اس قانون کے خلاف مسلمانوں کے ساتھ دوسری اقلیتوں نے بھی احتجاج کیا لیکن عالمی وبا کی وجہ سے مظاہرین کو اپنے مظاہرے ختم کرنا پڑے۔

واضح رہے کہ یہ مظاہرے بھارت کی بڑی ریاستوں میں پھیل چکے تھے اور پنجاب سمیت دیگر ریاستوں نے اس قانون کو ملک میں نافذ کرنے سے صاف انکار کر دیا تھا۔


ای پیپر