فوٹوبشکریہ فیس بک

توہین عدالت کیس: طلال چوہدری پانچ سال کیلئے نا اہل
02 اگست 2018 (09:53) 2018-08-02

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے توہین عدالت کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے طلال چوہدری کو پانچ سال کے لئے نا اہل قرار دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے سابق وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری کیخلاف توہین عدالت کیس کا فیصلہ سنایا دیا، فیصلے کے مطابق طلال چوہدری کو پانچ سال کے لئے نا اہل قرار دیدیا گیا ہے۔

جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے اپنا فیصلہ سنایا، طلال چوہدری کو آرٹیکل 204 کے تحت توہین عدالت کا مرتکب قرار دیا گیا۔ عدالت برخاست ہونے تک سزا اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی سزا سُنائی گئی۔

فیصلے کے دن طلال چوہدری کو عدالت میں حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی تھی۔ سپریم کورٹ نے طلال چوہدری کے خلاف توہین عدالت کیس کا فیصلہ 11 جولائی کو محفوظ کیا تھا۔

واضح رہے کہ چیف جسٹس نے یکم فروری کو طلال چوہدری کی عدلیہ مخالف تقاریر پر نوٹس لیا تھا۔

یاد رہے کہ طلال چوہدری نے مسلم لیگ (ن) کے جڑانوالہ میں جلسے کے دوران عوام سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایک وقت تھا جب کعبہ بتوں سے بھرا ہوا ہوتا تھا۔ آج ہماری عدالت جو ایک اعلیٰ ترین ریاستی ادارہ ہے میں پی سی او ججز کی بھر مار ہے۔


ای پیپر