نواز شریف کیخلاف کیسز کا فیصلہ کیا ہو سکتا ہے ؟لندن یا اڈیالہ جیل ۔۔۔؟
02 اپریل 2018 (22:49)

لاہور :پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما چودھری اعتزاز احسن نے کہا کہ ہر صورت فیصلہ ان کے خلاف ہو گا ،اس با ت کا امکان ہی نہیں کہ نواز شریف بچ سکیں ، نواز شریف اگلی کال یا تو لندن سے یا پھر اڈیالہ جیل سے دینگے ۔چودھری اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ شہباز شریف ہاتھ باندھ کر ججوں ،جرنیلوں اور سیاستدانوں کو خدا کے واسطے دے رہے ہیں ۔

 نیب نے جو دو ماہ پنجاب کی طرف توجہ دی ہے ، اس کے بعد شہباز شریف کے لئے پریشانی کا عالم ہے ۔ لاہور، پنڈی اور ملتان میٹرو بس پراجیکٹس، آشیانہ ہاسنگ سکیم اور احد چیمہ کے معاملات سامنے آ گئے ہیں۔ شہباز شریف تو منت سماجت پر آ گئے ہیں۔سابق وزےراعظم کیخلاف نیب ریفرنسز پر انہوںنے کہاکہ اس بات کا امکان ہی نہیں کہ نواز شریف بچ سکیں، اگر واجد ضیا کہتے ہیں کہ بچوں کے نام جائیداد ہے تو پھر بھی نواز شریف کو سزا یقینی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو اگر یقین ہوا کہ دس بارہ دن میں ضمانت ہو جائے گی تو پھر اڈیالہ جیل جانا پسند کریں گے لیکن اگر ضمانت میں زیادہ عرصہ لگنے کا خدشہ ہوا تو پھر نواز شریف لندن سے کال دیں گے۔انہوںنے نگران سیٹ اپ کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہاکہ اس معاملے پر حکومت اور اپوزیشن کا اتفاق ہونا مشکل لگتا ہے ۔ میرے خیال میں معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس جائے گا۔


ای پیپر