فوٹوبشکریہ فیس بک

نواز شریف نے احتساب عدالت کی 30 اگست کی کارروائی کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا
01 ستمبر 2018 (13:51) 2018-09-01

اسلام آباد : نواز شریف نے احتساب عدالت کی 30 اگست کی کارروائی کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا ، درخواست میں واجد ضیاء کے بیان کو ختم کرنے اور دوبارہ جرح کا حق دینے کی استدعا کرتے ہوئے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو فریق بنایا گیا۔

نواز شریف کے العزیزیہ ریفرنس میں 30 اگست کو واجد ضیاء کے بیان میں مبینہ تبدیلی کے معاملے کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا ، درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ احتساب عدالت کی 30 اگست کی سماعت کے دوران وکیل خواجہ حارث جرح کر رہے تھے جس کے دوران نیب پراسیکیورٹر کے کہنے پر واجد ضیاء کے بیان میں تبدیلی کی گئی، درخواست میں احتساب عدالت کے جج کو فریقی بناتے ہوئے استدعا کی گئی ہے 30 اگست کے واجد ضیاء کے بیان کو ختم اور دوبارہ جرح کرنے کی حق دیا جائے۔

احتساب عدالت میں 30 اگست کی سماعت کے دوران ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب نے جج سے ریکارڈ شدہ بیان کی تصیح کرانے کی استدعا کی تھی جسے جج ارشد ملک کی موجودگی میں تبدیل کیا گیا جس پر نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے شدید اعتراض کرتے ہوئے کمرہ عدالت سے باہر چلے گئے تھے۔

 

 

 

 

 

 

 

 


ای پیپر