جڑانوالہ: خاتون کو لفٹ دینے کے بہانے 6 افراد کی مبینہ اجتماعی زیادتی، برہنہ حالت میں پھینک کر فرار
01 اکتوبر 2020 (12:30) 2020-10-01

لاہور: جڑانوالہ روڈ پر ریپ کیس کا واقعہ سامنے آیا ہے۔ کار سوار ملزمان خاتون کو لفٹ دینے کے بہانے بٹھایا، نشہ پلا کر زیادتی کا نشانہ بنایا اور برہنہ حالت میں پھینک کر فرار ہو گئے

ذرائع کے مطابق یہ واقعہ 24 ستمبر کو پیش آیا لیکن پولیس نے پانچ دن بعد مقدمہ درج کیا۔

یہ واقعہ تھانہ مانگٹانوالہ کے قریب جڑانوالہ روڈ پر پیش آیا۔ پولیس کے مطابق پولیس کے مطابق ملزمان نے خاتون کو نشہ آور چیز پلائی اور جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ ملزمان خاتون کو برہنہ حالت میں پھینک کر فرار ہو گئے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ متاثرہ خاتون کو کار سوار افراد نے لفٹ کے بہانے گاڑی میں بٹھایا تھا لیکن اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ پولیس حکام نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے مقدمہ درج کرکے ملزمان کی تلاش شروع کر دی ہے۔ تام ابھی تک کوئی پیشرفت سامنے نہیں آئی۔

دوسری جانب وزیراعلی عثمان بزدار نے آر پی او شیخوپورہ سے واقعے کی رپورٹ طلب کرتے ہوئے سختی سے حکم دیا ہے کہ واقعہ میں ملوث ملزمان کو قانون کی گرفت میں لا کر انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں۔

خیال رہے کہ اس سے قبل لاہور موٹروے پر بھی خاتون کیساتھ زیادتی کا اندوہناک واقعہ پیش آیا تھا۔ پولیس نے واقعے میں ملوث ایک ملزم کو تو گرفتار کر لیا ہے تاہم مرکزی ملزم ابھی تک پولیس کی گرفت سے باہر ہے۔

صوبائی وزیر اطلاعات ونشریات فیاض الحسن چوہان نے واقعے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا ہے کہ خاتون کے ساتھ زیادتی کا واقعہ 24 ستمبر کو پیش آیا، 27 ستمبر کو خاتون نے زیادتی کیخلاف درخواست دی۔

فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ درخواست دینے کے بعد متاثرہ خاتون مانگٹانوالہ سے لاہور چلی گئی۔ ہم نے متاثرہ خاتون کو لاہور میں تلاش کرکے اس کا میڈیکل کرایا۔ متاثرہ خاتون سے زیادتی کے واقعہ کی مزید تفتیش ہونا باقی ہے۔


ای پیپر