سپریم کورٹ کا بنی گالہ میں ناجائز تجاوزت ختم کرنے کا حکم
01 اکتوبر 2018 (12:44) 2018-10-01

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے بنی گالہ تجاوزات سے متعلق کیس میں بنی گالہ میں گورنگ نالے کی حدود میں تمام تجاوزات کو سروے جنرل آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق ختم کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت جمعہ 12اکتوبر تک ملتوی کردی۔ پیر کو سپریم کورٹ میں بنی گالہ میں تجاوزات سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے سروے آف پاکستان کی رپورٹ عدالت میں پیش کردی۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے بتایا کہ سی ڈی اے ‘ وفاقی محتسب کی سروے رپورٹس ایک جیسی ہیں۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ تجاوزات کو کیسے ختم کیا جائے؟ تجاوزات کے علاوہ سکیورٹی اور آلودگی جیسے مسائل بھی ہیں اب نئی حکومت آگئی ہے معاملات کو حل کریں۔ جنہوں نے غیر قانونی تعمیرات کیں ان سے جرمانے لئے جائیں حکومت اپنے جرمانے بھی ادا کرے اور دوسرے لوگوں سے بھی لے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ تجاوزات کی حد تک اس معاملے کو نمٹا دیتے ہیں ریگولرائز کرنے کے لئے سب سے پہلے عمران خان کو فیس ادا کرنا ہوگی۔ چیف جسٹس نے بابر اعوان سے مکالمہ کیا بتائیں ریگولرائز کرنے کے لئے کیا کررہے ہیں عمران خان کو پراپرٹی ریگولرائز کرانا پڑے گی۔ بابر اعوان نے بتایا کہ یہ معاملہ کابینہ کے پاس ہے چیف جسٹس نے بابر اعوان سے مکالمہ کیا کہ آپ کی تجاویز پر یہ عمل شروع کیا گیا سپریم کورٹ نے بنی گالہ تجاوزات سے متعلق کیس کی سماعت جمعہ تک ملتوی کردی۔ 


ای پیپر