عمران خان 2 دن میں مستعفی ہوں :مولانا فضل الرحمن
01 نومبر 2019 (19:06) 2019-11-01

 اسلام آباد: جمعیت علماء اسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے  عمران خان کے استعفیٰ کیلئے  دو دن کی مہلت دیدی ، انہوں نے دو دنوں میں اداروں سے بھی  حکومتی پشت پناہی کے حوالے سے پوزیشن واضح کرنے کا مطالبہ کردیا ہےاور کہا ہے کہ عوامی سمندر قدرت رکھتا ہے کہ اسلام آباد میں اسے( عمران خان )  گھر جاکر گرفتار کرلے۔

اسلام آباد میں میں آزادی مارچ کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے  مولانا فضل الرحمن نے  کہا پوری دنیا نے  یہ دیکھ لیا ہے کہ عوام کو حق حکمرانی حاصل ہے، کسی اور کو پاکستان پر مسلط  ہونے کا حق حاصل نہیں ہے ولولہ عزم سب کے ساتھ ہے، جس  جذبے اور عزم کے ساتھ شریک ہوئے ہیں ، قومی یکجہتی کا اظہار ہورہا ہے، حکومت کا خاتمہ قومی مطالبے کا روپ دھارچکا ہے یہ سنجیدہ اجتماع ہے جسے پوری دنیا سنجیدگی سے لے رہی ہے۔ عوام انصاف کی بنیاد پر نظام چاہتے ہیں، عوام کی مرضی کے بغیر کوئی نظام نہیںچل سکتا، یہ عوام کا حق ہے اور اس بارے میں وحدت سے اپنی آواز کو بلندکیا گیا ہے۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ ہم  نے کسی سے کوئی کمٹمنٹ نہیں کی، میڈیا پر پابندی نہ ہٹی تو ہم بھی کسی بات کے پابند نہیں رہیں گے، جم غفیر مطالبہ کررہا ہے ڈی چوک ، ڈی چوک ، نواز شریف ، آصف علی زرداری، محمود خان اچکزئی، اسفندیارولی خان ، اویس نورانی سب نے  عوام کی آواز سن لی ہے، عمران خان   چوروں کا چور ہے، عوامی سمندر قدرت رکھتا ہے کہ اسلام آباد میں اسے  گھر جاکر گرفتار کرلے، ہم پرامن ہیں، مزید صبرو تحمل کا مظاہرہ نہیں کرسکتے، ڈی چوک بارے عوام کی آواز جن کو سنانا چاہتے ہیں انہوں نے بھی سن لیں۔

انہوں نے کہاکہ ہم نے  اس وحدت کا اظہار ربیع الاول کے مقدس مہینے سے کیا ہے جو رحمتوںکا مہینہ ہے اور اس رحمتوں کے مہینوں میں اجتماع کاآغاز کیاہے ا للہ کی رحمت اس اجتماع پر برس رہی ہے۔ ناموس رسالتۖ اور تحفظ عقیدت ختم نبوتۖ کے عزم کے ساتھ میدان میں اتررہے ہیں، سب سے مبارک اجتماع ہے ۔ ہم سب کامتفقہ موقف ہے کہ 25جولائی 2018ء کو فراڈ انتخابات ہوئے تھے، بدترین دھاندلی ہوئی تھی ، نتائج کو تسلیم نہیںکرتے، دھاندلی کے نتیجے میں قائم حکومت کو تسلیم نہیںکرتے ، ایک ہی فیصلہ ہے کہ اس حکومت کو گھر جانا ہے۔ بڑی مہلت دیدی ہے، ایک سال سے  برداشت کررہے ہیں مزید برداشت کرنے کے روادار نہیں ہوسکتے ۔ پوری قوم ان سے  آزادی چاہتی ہے۔


ای پیپر