سلیکٹڈ وزیر اعظم کو گھر بھجوا کر چھوڑیں گے : بلاول بھٹو زرداری
01 نومبر 2019 (18:20) 2019-11-01

اسلام آباد: پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ سیاسی جماعتوں، مزدور، کسانوں اور پورے پاکستان کا ایک ہی نعرہ ہے گو سلیکٹڈ گو، سلیکٹڈ وزیراعظم کو گھربھجوا کر چھوڑیں گے۔

جمعہ کو آزادی مارچ سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ تمام اپوزیشن سیاسی جماعتوں نے اکٹھے ہو کر وفاق، اسلام آباد اورپارلیمان کو واضح پیغام دیا ہے کہ ملک کی عوام آج بھی صرف اور صرف جمہوریت چاہتی ہے ، وہ اسلامی وفاقی اور جمہوری پارلیمانی نظام جس کو ہم سب نے ملک 1973کے آئین میں پاس کی اتھا وہی آئین ملک کی عوام چاہتی ہے ، عوام سلیکٹڈ اور کٹھ پتلی نظام کو نہیں مانتی ، نئے پاکستان میں کس قسم کی جمہوریت اورآزادی ہے کہ 70سال گزرنے کے باوجود ہم صاف شفاف انتخابات نہیں کروا سکتے ۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ نئے پاکستان میں کس قسم کی جمہوریت اورآزادی ہے کہ 70سال گزرنے کے باوجود ہم صاف شفاف انتخابات نہیں کروا سکتے، فوج کسی سیاسی جماعت کی نہیں بلکہ ہم سب کی فوج ہے ہم سب نے مل کر اس کو غیر سیاسی رکھنا ہے ، ہم فوج کو غیر متنازع نہیں ہونے دیں گے،آج حکومت کے ساتھ ساتھ ہمارا میڈیا بھی سلیکٹڈ ہے،معاشی دہشت گردی سے ہر طبقے کا معاشی قتل کیا جا رہا ہے، جو ایک پاکستان کا دعویٰ کرتے تھے، عوام کو تکلیف اور امیروں کو ریلیف دے رہے ہیں،ہر جمہوری قدم میں ان کے ساتھ ہوں گے اور اس سلیکٹڈ اور کٹھ پتلی وزیراعظم کو مل کر گھر بھیجیں گے۔

انہوں نے کہا کہ  2018کے انتخابات میں ہمارے پولنگ ایجنٹس کو باہر بھیج دیا جاتا ہے ، پولنگ اسٹیشن کے اندر اور باہر فوج کو کھڑا کیا جاتا ہے ، فوج جس کا کام صرف اور صرف سیکیورٹی کے اس سے ہم ووٹر لسٹیں چیک کر وا رہے ہیں ، ضیاء اور مشرف کے دور میں بھی دھاندلی ہوتی تھی مگر اس دور میں بھی پولنگ اسٹینشز کے اندر اورباہر فوج کھڑی نہیں کی جاتی تھی ،2008اور2013کے الیکشن میں جب دہشت گردی عروج پر تھی اس وقت بھی پولنگ اسٹیشنوں کے اندر اور باہر فوج کھڑی نہیں کی گئی تھی ، بتایا جائے کہ 2018کے الیکشن میں عمران خان کیلئے ایسا کیوں کیا جاتا ہے ، یہ فوج کسی سیاسی جماعت نہیں بلکہ ہم سب کی فوج ہے ، یہ ہر پاکستانی کی فوج ہے اور ہم سب نے مل کر اس کو غیر سیاسی رکھنا ہے۔


ای پیپر