سنٹرل جیل سے نیب عدالت لاتے کرپشن کیس میں گرفتار شاہد صدیقی انتقال کر گئے
01 نومبر 2018 (18:52) 2018-11-01

کراچی: کرپشن کیس میں گرفتارکراچی فشرمین سوسائٹی کے فنانس مینیجر شاہد صدیقی سینٹرل جیل سے نیب عدالت لاتے ہوئے مبینہ طور پر دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی فشرمین کوآپریٹیو سوسائٹی میں کرپشن کیس میں گرفتار سابق چیئرمین فشری نثارمورائی کا ایک ساتھی شاہد صدیقی سینٹرل جیل سے نیب عدالت لاتے ہوئے مبینہ طور پر دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگیا۔کراچی فشرمین سوسائٹی کے فنانس مینیجر شاہد صدیقی کو گزشتہ دنوں کرپشن کیس میں گرفتار کیا تھا اور وہ سینٹرل جیل میں قید تھے۔ڈی آئی جی جیل خانہ جات ناصر آفتاب کے مطابق فشری ریفرنس کے تمام ملزمان کو احتساب عدالت میں پیشی کے لئے لایا جا رہا تھا کہ شاہد صدیقی کو ماڑی میں بیٹھے ہوئے دل کا دورہ پڑا۔ڈی آئی جی جیل ناصر آفتاب کے مطابق شاہد صدیقی کو فوری طور پر جیل کے اسپتال لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ان کی موت کی تصدیق کردی۔

جیل حکام کے مطابق اب ان کی میت مجسٹریٹ کی قانونی کارروائی کے بعد جناح اسپتال منتقل کی جا رہی ہے۔ شاہد صدیقی اور دیگر کئی فشری ملازمین کو فشری کرپشن کیس میں سابق چیئرمین نثار مورائی کے سہولت کار کے طور پر گرفتار کیا گیا تھا۔ شاہد صدیقی بلدیہ ٹاون کے رہائشی تھے، جیل حکام کے مطابق گزشتہ روز انہیں دل کا عارضہ لاحق ہوا تھا اور انہیں جیل سے آغا خان اسپتال لایا گیا۔ آغاخان اسپتال کی انتظامیہ نے انہیں علاج کی غرض سے اسپتال میں داخل کرنا چاہا تھا مگر شاہد صدیقی نے مہنگے اسپتال میں علاج کی طاقت نہ رکھنے کی بنا پر علاج سے معذرت کر لی تھی جس کے بعد انہیں کسی سرکاری اسپتال لے جانے کی بجائے جیل منتقل کردیا گیا تھا۔


ای پیپر