فوٹوبشکریہ فیس بک

'پہلے لاک ڈاؤن کی باتیں کی جاتی تھیں آج کہا جارہا ہے سڑکیں بند کرنا قومی مفاد میں نہیں'
01 نومبر 2018 (14:39) 2018-11-01

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ جو مذہب کارڈ گزشتہ حکومت کیخلاف استعمال کیا گیا آج بھی کیا جا رہا ہے۔

قومی اسمبلی کے اجلاس سے اظہار خیال کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ سپیکر اسد قیصر کی غیر جانبداری اور شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے پر سپیکر کے شکر گزار ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں بحرانی کیفیت ہے اور ریاست کا تقدس سب کیلئے مقدم ہے۔ موجودہ صورتحال میں ہم سیاسی فائدہ نہیں اٹھانا چاہتے۔ کچھ لوگ سڑکوں پر ہیں، ان کا جو رویہ ہے کوئی باشعور شہری ان کے ساتھ نہیں۔ پاکستان کا تحفظ پوری قوم کی ذمہ داری ہے۔ خورشید شاہ نے جو باتیں کی ہیں وہ ذمہ داری پر مبنی ہیں۔ وزیراعظم کا رویہ حقیقت میں جارحانہ تھا۔ وزیراعظم کا طرز عمل ایک باپ جیسا ہوتا ہے۔

خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ کچھ روز پہلے شہروں کو لاک ڈاؤن کرنے کی باتیں کی جاتی تھیں آج کہا جارہا ہے سڑکیں بند کرنا قومی مفاد میں نہیں ہے۔ حکومت کا رویہ جارحانہ نہیں ہونا چاہئے، ہم حکومت سے لڑنا نہیں چاہتے۔ وزیراعظم کو ایوان میں آکر اعتماد میں لینا چاہئے تھا۔ تحریک انصاف میں سیاسی پختگی آ جانی چاہئے۔ طاقت کے استعمال کو روکا جانا چاہئے۔


ای پیپر