بھارتی فوج کو کوہ ہمالیہ میں خیالی وحشی انسان نظر آنے لگے
01 May 2019 (22:31) 2019-05-01

نئی دہلی: بھارتی افواج نے کوہ ہمالیہ کے پہاڑوں پر پائے جانے والے فرضی و خیالی وحشی انسان کے قدموں کے نشانات دیکھنے کا دعوی کرکے ایک مرتبہ پھر خود کو مذاق کا نشانہ بنوالیا ہے۔

انڈین آرمی کی جانب سے کچھ عرصہ قبل پاکستان ایئرفورس کا ایک جدید لڑاکا طیارہ ایف -16 گرانے کا بھی مضحکہ خیز دعوی سامنے آیا تھا جس کی پوری دنیا نے تردید کی اور نتیجتا بھارتی فوج کا سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر مذاق بنا۔اس سے قبل وہ سرجیکل اسٹرائیک کے ذریعے سینکڑوں پاکستانیوں کو جاں بحق کرنے کا بھی جھوٹا دعوی کر چکی تھی۔ اس اسٹرائیک میں چند درختوں کو بھارتی فضائیہ نے ضرور زخمی کیا تھا اور جب ذرائع ابلاغ نے جائے وقوع کا دورہ کیا تو انہیں وہاں ایک کوے کی لاش کے سوا کچھ نہیں ملا تھا۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر 60 لاکھ فالوورز کی تعداد رکھنے کا دعوی کرنے والی بھارتی فوج اس وقت پوری دنیا میں مذاق کا نشانہ بنی جب انڈین آرمی کے ٹوئٹر اکانٹ سے چند ایسی تصاویر شیئر کی گئیں جن کے متعلق دعوی کیا گیا کہ بھارتی فوج کی ایک کوہ پیما ٹیم کو ہمالیہ میں مکالو بیس کیمپ کے علاقے میں برف پر تصوراتی و خیالی وحشی انسان کے قدموں کے نقوش ملے ہیں۔

یہ خیالی وحشی انسان عرف عام میں ژیٹی کے نام سے جانا جاتا ہے۔جنوبی ایشیا کی دیو مالائی داستانوں اور لوک کہانیوں کا کردار ژیٹی دراصل ایک گوریلا ہے جو بڑے سائز کا ہے۔ آج تک سائنس اور ماہرین حیاتیات اس کی موجودگی کے اثرات دریافت نہیں کرسکے ہیں مگر فرضی کہانیوں کا یہ ایک لازمی کردار ہے اور پراسراریت سے بھرپورہونے کی وجہ سے اپنے اندر ایک کشش بھی رکھتا ہے۔


ای پیپر