آغا سراج درانی کے جسمانی ریمانڈ میں 11 مارچ تک توسیع
01 مارچ 2019 (14:29) 2019-03-01

کراچی :احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثے رکھنے کے الزام میں گرفتار ہونے والے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے جسمانی ریمانڈ میں 11 مارچ تک توسیع کردی۔

جمعہ کو قومی احتساب بیورو (نیب )کی جانب سے پیپلزپارٹی کے رہنما آغا سراج درانی کو احتساب عدالت میں پیش کیا گیا،عدالت میں سماعت کے آغاز پرمعزز جج نے نیب کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیوں ریمانڈ چاہیے ؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہ روزانہ کی بنیاد پراسمبلی میں موجود رہتے ہیں، 8 بجے تک واپس آتے ہیں،وکیل نیب نے کہا کہ بدرکمرشل میں ایک جائیداد33لاکھ میں خریدی، مالک سے پتہ کیا کہ جائیداد 8 کروڑ روپے کی ہے، 2 کروڑ روپے تعمیرات پر خرچ کیے، فیز5 میں بھی جائیداد ہے،تفتیشی افسر نے کہا کہ آغا سراج کے اسمبلی جانے کی وجہ سے تفتیش میں مشکلات ہیں، آغا سراج درانی کی کروڑوں کی جائیداد کا معلوم ہوا ہے،تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ مختلف بنگلے آغا سراج درانی کی ملکیت ثابت ہو رہے ہیں، صاحبزادی شہناز درانی نے 3 فلیٹ بک کرائے۔

انہوں نے احتساب عدالت میں کہا کہ فرنٹ مین گلزار احمد مفرور ہے، گرفتاری کی کوشش کر رہے ہیں، آغا سراج درانی کو گھر کی طرح رکھا ہوا ہے،تفتیشی افسر نے کہا کہ آغا سراج درانی کا باقاعدہ میڈیکل کرایا جا رہا ہے، مکمل چھان بین کے لیے مزید ریمانڈ مطلوب ہے،احتساب عدالت نے ریمارکس دیے کہ نیب مطمئن کرے ریمانڈ کتنا اورکیوں چاہیے جس پر نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ بہت وقت درکارہوگا کیونکہ اکا ؤنٹس کی تحقیقات کی جانی ہیں۔

عدالت نے آغا سراج درانی کے وکیل سے کہا کہ آپ اپنے موکل کوکہیں نیب سے تعاون کریں،بعدازاں احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثے رکھنے کے الزام میں گرفتار ہونے والے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے جسمانی ریمانڈ میں 11 مارچ تک توسیع کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر نیب سے پیش رفت رپورٹ طلب کرلی۔


ای پیپر