دلائی لامہ کو اپنی جانشینی کیلئے پرکشش خاتون کی تلاش
01 جولائی 2019 (19:23) 2019-07-01

تبت:تبت کے روحانی پیشوا دلائی لامہ نے ایک بار پھر کہا ہے کہ اگر ان کی جگہ کسی خاتون کو جانشین مقرر کیا جائے گا تو لازم ہے کہ وہ انتہائی پرکشش ہو۔ دلائی لامہ اس سے قبل بھی یہ بات کہ چکے ہیں کہ اگر ان کی جگہ کسی خاتون کو جانشین مقرر کیا جائے تو اس کے لیے لازم ہے کہ وہ خوبرو ہونی چاہئیے، تاکہ ان کی پیروی کرنے والے افراد اسے دیکھتے رہیں۔

تفصیلات کے مطابق دلائی لامہ تبت کے بدھ مت کے ماننے والے افراد کے روحانی پیشوا کا عہدہ ہے، جس کی معنی علم کے سمندر اور رحمت و شفقت کا ذریعہ ہے۔اس وقت تبت کے چودہویں دلائی لامہ روحانی پیشوا کے طور پر خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔تبت ایک متنازع علاقہ ہے، جسے چین اپنا خود مختار علاقہ تصور کرتا ہے اور چین کی جانب سے اس علاقے میں اپنا اثر و رسوخ بڑھائے جانے کے بعد دلائی لامہ وہاں سے فرار ہوکر بھارت کی چین کی سرحدی ریاست ہما چل پردیش کے پہاڑی علاقے دھرم شالا میں رہائش کے لیے چلے گئے۔

دلائی لامہ کو بھارت کی جانب سے سیاسی پناہ دیے جانے کی وجہ سے بھی چین اور انڈیا کے درمیان تعلقات کشیدہ رہتے ہیں۔تاریخی حساب سے دلائی لامہ اپنی زندگی میں ہی نئے دلائی لامہ کا عندیہ دیتا ہے اور حاضر دلائی لامہ اپنی موت سے قبل بتاتا ہے کہ اس کا اگلا جنم کس گھر میں ہوگا اور اس گھر میں پیدا ہونے والے نئے بچے کو دلائی لامہ سمجھا جاتا ہے۔چودہویں دلائی لامہ تنزن گیاتسو کے حوالے سے تیرہویں دلائی لامہ عندیہ دے کر گئے تھے اور انہیں محض 2 سال کی عمر میں 1937 کو ہی دلائی لامہ کے منصب پر بٹھائے جانے کی تیاریاں شروع کی گئی تھیں۔

حالیہ دلائی لامہ کو 1940 میں محض 5 برس کی عمر میں تبت کے روحانی پیشوا کے منصب پر بٹھا دیا گیا تھا اور وہ تب سے اپنی ذمہ داریاں نبھاتے آ رہے ہیں۔ دلائی لامہ چین سے اختلافات اور تبت سے فرار ہوکر بھارت میں رہائش اختیار کرنے کے بعد نہ صرف چین مخالف بیانات دیتے ہیں بلکہ عالمی سیاسی مسائل پر بھی بات کرتے ہیں۔چین کی خواہش ہے کہ وہ چودہویں دلائی لامہ کی جگہ نیا جانشین مقرر کرے، تاہم تبت کے لوگ اور حالیہ دلائی لامہ اس فیصلے کی مخالفت کرتے ہیں۔

چین کی جانب سے جانشین مقرر کیے جانے کی مخالفت کرنے کے باوجود دلائی لامہ نے 2015 میں کہا تھا کہ اگر ان کی جگہ کوئی اور جانشین مقرر کیا جاتا ہے اور اگر کسی خاتون کو ان کی جگہ منصب پر بٹھایا جاتا ہے تو لازم ہے کہ وہ خوبرو اور پرکشش ہو۔ دلائی لامہ کے اس بیان کے بعد انہیں تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا، تاہم اب ایک بار پھر انہوں نے اپنے اسی بیان کو دہراتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی جگہ مقرر کی جانے والی خاتون جانشین کا پرکشش ہونا لازمی ہے۔


ای پیپر