naibaat.pk,urdu news,breaking news,urdunews,neonetwork.pk,neo tv,neo news
01 جنوری 2021 (14:53) 2021-01-01

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ2021 ء ترقی کا سال ہے، پاکستان مثبت میں جا رہا ہے، کاروبار دوست پالیسی بنا کر صنعتوں کو ترقی دیں گے، ہم ہر قسم کے چیلنجز کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں، احساس پروگرام کے تحت بھوکے افراد کیلئے ایسا پروگرام شروع کریں گے جس میں پوری قوم کو شامل کریں گے۔

پاکستان میں نئی گاڑیوں کے متعارف ہونے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ میرے سال نو 2021 کے دو اہداف ہیں جن میں ایک تو یونیورسل ہیلتھ کوریج ہے جو ہمارے صوبوں پنجاب، گلگت بلتستان اور خیبر پختو نخوا میں ہوگی، ہر گھرانے کے پاس ہیلتھ انشورنس ہوگی، شہری کسی بھی ہسپتال میں جاکر ہیلتھ کارڈ دکھاکر اپنا علاج کراسکیں گے، یہ بہت بڑاچیلنج ہے جو امیر ممالک میں بھی نہیں ہوتا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے لوگوں کو بھوک سے بچایا، پاکستان نے برصغیرمیں کووڈ میں سب سے زیادہ تیزی سے ریکور کیا، کووڈ کے دوران امریکا میں بھی کھانے کیلئے لائنیں لگی ہوئی ہیں۔کاروبار دوست پالیسی بنا کر صنعتوں کو ترقی دیں گے، برآمدات میں اضافے کیلئے چین کی مدد حاصل کریں گے، ہر قسم کے چیلنجز کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بڑا پوٹینشل ہے اور جن چیزوں پر ہم کام کررہے ہیں ایک مخصوص مدت کے بعد ہماری ایکسپورٹس بڑھیں گی تاہم  مختصر مدت کے لئے ہم چین سے پوری مدد لیں گے۔ ملکی زرعی پیداوار میں اضافے کی کوشش کریں گے، ہماری کوشش ہے اکنامک زونز میں چینی سرمایہ کاری آئے، چین دنیا میں سب سے تیزی سے آگے بڑھنے والا ملک ہے، صنعتی طور پر مضبوط ہونے کیلئے چین سے شراکت داری ضروری ہے، ہماری کوشش ہے عوام کو غربت سے نکالیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں آئی ایم ایف کے پاس کیوں جانا پڑتا ہے کیونکہ ہماری درآمدات بڑھ جاتی ہیں اور برآمدات کم ہو جاتی ہے اور اس کی وجہ سے خسارہ ہوتا ہے اور کرنٹ اکائونٹ خسارہ بڑھ جاتا ہے ، پھر اپنی معیشت کو سکیڑنا پڑنا  ہے اور اس کی وجہ سے لوگوں پر مشکلات آتی ہیں ۔ہم چینی حکام کے ساتھ بیٹھ کر پورا پروگرام دیں گے کہ کس طرح ہم شروع میں اپنی ایکسپورٹس بڑھا سکتے ہیں۔ 


ای پیپر