Punjab Police,allegation,siblings,sit ups,video viral
01 جنوری 2021 (13:01) 2021-01-01

لاہور :پنجاب پولیس پر ایک نیا الزام لگ گیا ٗ بہن بھائی نے الزام لگایا ہے کہ وہ فیکٹری سے واپس گھر جا رہے تھے کہ پنجاب پولیس کے اہلکاروں نے انہیں زدو کوب کیا ٗ مرد پولیس اہلکار کے لڑکی کی تلاشی لی ۔ بہن بھائی کو تھپڑ مارے گئے اور ان سے اٹھک بیٹھک کروائیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کے ایک بہن بھائی نے پنجاب پولیس پر الزام لگایا ہے کہ نوجوان کا سویٹر اتروا کر پولیس اہلکاروں نے تھپڑ مارے ٗ میری بہن کو بھی تھپڑ مارے  اور ان کی تلاشی بھی لی ۔ لڑکی نے بتایا کہ ہم دونوں بہن بھائی فیکٹری میں جاب کرتے ہیں۔ فیکٹری سے گھر جا رہے تھے۔پولیس والوں نے ہمیں راستے روک لیا ٗ ہم سے شناختی کارڈ مانگے جو ہمارے پاس نہیں تھے۔ہمیں تھانے کے اندر لیجایا گیا ۔وہاں جاکر مرد پولیس اہلکاروں نے ہمیں تھپڑ مارے ہیں۔تھپڑ مار کر بھائی کی تلاشی لی ٗ ہم سے کچھ نہیں نکلا تو جمشید نام کے دو پھولوں والے پولیس والے نے میری تلاشی لی ۔ 

لڑکی نے مزید بتایا کہ جب ہم سے کچھ نہ نکلا تو پولیس والوں نے ہمیں جانے کو کہا اور جب ہم جانے لگے تو تھانے کے باہر پولیس کی گاڑی کے سامنے ہماری اٹھک بیٹھک کروائی۔ 

غالب مارکیٹ لاہور کے ایس ایچ او نے ان خبر کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس کی خلاف یہ ہوٹل مافیا کی سازش ہے کیونکہ پولیس نے اس علاقے میں ہوٹل مافیا کیخلاف ایک آپریشن شروع کر رکھا ہے۔ پولیس کا کوئی بھی اہلکار اس طرح کی کسی کارروائی میں ملوث نہیں مگر ہم اس بارے میں مزید تحقیق بھی کر رہے ہیں۔


ای پیپر