بھارتی نئے آرمی چیف کی بڑھک کا پاکستان نے جواب دیدیا
01 جنوری 2020 (23:37) 2020-01-01

اسلام آباد:ترجمان دفترخارجہ عائشہ فاروقی نے بھارتی آرمی چیف کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کی طرف سے کسی بھی جارحانہ اقدام پر منہ توڑ جواب دیا جائے گا،کسی کو پاکستان کے عزم اور تیاری پر شک نہیں ہونا چاہیے ،بھارت کو بالا کوٹ پر حملے کے نتیجے میں پاکستان کا ردعمل یاد رکھنا چاہیے ،مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاﺅن کو 150 دن ہو چکے ہیں ۔ مقبوضہ کشمیر میں صورتحال معمول پر لانے کے بھارتی دعوﺅں میں حقیقت نہیں ہے ،قید سینئر کشمیری قیاد ت اور چھوٹے بچوں کو رہا کیا جائے اور نو لاکھ اہلکاروں کو فوری طور پر مقبوضہ کشمیر سے نکالا جائے ،ایل او سی پر حالات خراب کرنے کے بھارتی بیانات فالس فلیگ آپریشن کی طرف اشارہ کرتے ہیں ،پاکستان اپنی سرزمین پر کسی بھی بھارتی حرکت سے نمٹنے کے لئے تیار ہے ۔

بدھ کو ترجمان دفترخارجہ عائشہ فاروقی نے بھارتی آرمی چیف کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کی طرف سے کسی بھی جارحانہ اقدام پر منہ توڑ جواب دیا جائے گا ۔کسی کو پاکستان کے عزم اور تیاری پر شک نہیں ہونا چاہیے ۔بھارت کو بالا کوٹ پر حملے کے نتیجے میں پاکستان کا ردعمل یاد رکھنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن و سلامتی کے لئے کردارادا کرتا رہے گا اور کشمیریوں کی اخلاقی، سیاسی، سفارتی حمایت جاری رکھے گا ۔پاکستان عالمی سطح پر کشمیر کے لئے اپنی آواز بلند کرتا رہے گا۔ مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاﺅن کو 150 دن ہو چکے ہیں ۔ مقبوضہ کشمیر میں صورتحال معمول پر لانے کے بھارتی دعوﺅں میں حقیقت نہیں ہے ۔ قومی سلامتی کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر حل کیا جانا چاہیے ۔ بھارتی فوج کی طرف سے قید کیگئی سینئر کشمیری قیاد ت اور چھوٹے بچوں کو رہا کیا جائے ۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ نو لاکھ اہلکاروں کو فوری طور پر مقبوضہ کشمیر سے نکالا جائے ۔ ایل او سی پر حالات خراب کرنے کے بھارتی فوج کے بیانات قابل مذمت ہیں ۔ بھارتی بیانات فالس فلیگ آپریشن کی طرف اشارہ کرتے ہیں ۔ بھارت اپنے اندرونی حالات قوم پرست دہشتگردی کی روک تھام کرے ۔ بھارت کے نئے آرمی چیف کا آزاد کشمیر پر حملے کا بیان غیر ذمہ دارانہ ہے ۔ پاکستان اپنی سرزمین پر کسی بھی بھارتی حرکت سے ننمٹنےکے لئے تیار ہے ۔


ای پیپر