جاوید لطیف کی نیب میں پیشی
01 جنوری 2020 (17:41) 2020-01-01

لاہور:قومی احتساب بیورو( نیب ) کے طلب کرنے پر لیگی رکن قومی اسمبلی جاوید لطیف ضروری ریکارڈ کے ہمراہ پیش ہوئے ۔ نیب کی تفتیشی ٹیم نے جاوید لطیف سے آمدن سے زائد اثاثوں کی کیس میں دوگھنٹے تک پوچھ گچھ کی ۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ احتساب بلا تفریق او ربلا امتیاز ہونا چاہیے لیکن گزشتہ ڈیرھ سالوں میں صرف اپوزیشن کے لوگوں کے علاوہ کسی کو نہیں بلایا گیا ۔مجھے جب بھی بلائیں گے میں پیش ہو جاﺅں گا ۔ انہو ں نے کہا کہ عوام دو وقت کی روٹی کو ترس رہے ہیں ،آپ لنگر خانے کھول رہے ہیں ،مہنگائی کا سیلاب اپوزیشن کی گرفتاریوں سے ختم نہیں ہو گا۔

نیب کے ترمیمی آردیننس سے بدبو آرہی ہے ، اس آرڈیننس کے ذریعے آپ احتساب کا رخ بدلنا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان داخلی اور خارجی محاذ پر کمزورہورہا ہے ،آج ہمیں فکر ہے کہ آزاد کشمیر بھی خطرے میں ہے ۔

ترمیمی آرڈنینس میں ترمیم کرنے کی بجائے نیب کے کالے قانون کو ختم کرنے کے لئے بل لے کر آئیں ، بل صرف آپ کا نہیں ہونا چاہیے بلکہ متفقہ ہونا چاہیے ،نیب کو ہمیشہ مخالفین کے خلاف استعمال کیا گیا ، موجودہ دور میں ترمیمی آرڈیننس اپنے لوگوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے لایا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں دو ماہ میں حکومت تبدیل ہوتے دیکھ رہا ہوں۔


ای پیپر