فوٹو بشکریہ فیس بک

سرفراز احمد پر پابندی، پی سی بی کے اعتراض پر آئی سی سی کا ردعمل
01 فروری 2019 (13:56) 2019-02-01

لندن: سرفراز احمد پر نسل پرستانہ فقرے بازی پر عائد پابندی ، پی سی بی کے اعتراض پر آئی سی سی کا ردعمل بھی آگیا۔

چیف آپریٹنگ آفیسر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل ڈیو رچرڈسن نے کہا کہ نسل پرستانہ فقرے بازی اور کرپشن سے کرکٹ کی شہرت کو نقصان پہنچا، سی ای او کے مطابق انہیں سپرٹ آف کرکٹ کو محفوظ بنانا ہے۔

ڈیو رچرڈسن نے کہا کہ کھلاڑیوں کے نظم و ضبط کے حوالے سے حالیہ دنوں میں چند واقعات ہوئے ہیں۔ ہم نے ان واقعات پر ضروری اقدامات لیے تاکہ ہر کھلاڑی کو سپرٹ آف کرکٹ کی سمجھ ہو۔

واضح رہے کہ قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد پر پابندی عائد ہونے پر چیئرمین پی سی بی احسان مانی آئی سی سی پر برس پڑے تھے۔ کرکٹ ویب سائٹ کو انٹرویو میں چیئرمین پی سی بی نے کہا

سرفراز احمد پر 4 میچز کی پابندی کیوں لگائی؟ اگر صلح آئی سی سی کے قوانین کے تحت نہیں ہوسکی تو اسکا مطلب یہ نہیں کہ صلح نہیں ہوئی۔

سرفراز احمد کے معاملہ پر آئی سی سی نے بیوروکریسی کو ترجیح دی، سرفراز احمد سے متعلق آئی سی سی کا فیصلہ خاموشی سے آیا، ہمیں اعتماد میں نہیں لیا گیا۔ سرفراز احمد نے باضابطہ غلطی کا اعتراف کیا، پھر معافی مانگی، اس کے باوجود سزا سمجھ سے باہر ہے۔

سرفراز احمد فیلوک وائیو اور پاک جنوبی افریقی بورڈ میں معاملات طے ہو چکے تھے۔ فریقین کی صلح کے باوجود آئی سی سی کا بیچ میں آنا سمجھ سے بالاتر ہے۔


ای پیپر