اپوزیشن کے جلسوں میں کورونا آ جاتا ہے اور کورونا نہ ہو تو نیب آجاتا ہے, ناصر حسین شاہ
01 دسمبر 2020 (22:16) 2020-12-01

لاہور: پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنمائوں و  صوبائی وزراء سندھ سعید غنی اور ناصر حسین شاہ نے آج پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز شریف سے ملاقات کی اور شہباز شریف کی والدہ کی وفات پرتعزیت کا اظہار کیا۔ 

تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ناصر حسین شاہ کہا کہ ہمارا وفد تعزیت کیلئے آیا ہے۔  ہم شریف خاندان کے ساتھ دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کی کارکردگی کیخلاف لوگ باہر نکلے ہیں۔ صوبائی وزیر سندھ برائے لوکل گورنمنٹ ناصر حسین شاہ نے کہا کہ اپوزیشن کے جلسوں میں کورونا آ جاتا ہے اور کورونا نہ ہو تو نیب آجاتا ہے۔ گھوٹکی اور لاڑکانہ میں حکومت کے خود اپنے جلسوں میں کورونا ایس او پیز دیکھے جا سکتے ہیں۔ کل کے جلسے میں لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت عام آدمی کا جینا دو بھر ہوا ہے،عام آدمی دوائیاں، بجلی کے بل اور بچوں کے اخراجات نہیں برداشت کر سکتا۔ انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ کوڈ 19 نے این آر او جن کو دینا تھا انہیں دے دیا گیا ہے۔ موجودہ حکومت لڑکھڑاتی اور مانگے تانگے کی حکومت ہے۔ ابھی چودھری برادران ناراض تھے کل اختر مینگل چھوڑ گئے۔ 

پیپلز پارٹی کے رہنما سعید غنی  نے کہا کہ ملتان میں تمام راستے بند کرنے کے باوجود ہزاروں لوگ جمع ہوئے۔ پاکستان کی عوام اب حکومت کے جبر سے گھبرا کر پیچھے ہٹنے والے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب یہ سلسلہ رکنے والا نہیں ہے۔ وزرا کے بیانات پر حیرت ہوتی ہے انہیں سمجھ نہیں آتی ۔انہوں نے کہا کہ 13 دسمبر کو لاہور کا جلسہ تاریخی ہوگا۔ سعید غنی نے کہا کہ پی ٹی آئی سیاست دانوں کی جماعت نہیں ہے،یہ اٹھائی گیروں اور ٹھگ بازوں کی جماعت ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو سب کو چور کہتا ہے اسکی بہن اور لیڈروں نے این آر او لے رکھے ہیں۔ وزیر تعلیم سندھ انہوں نے کہا کہ آصفہ بھٹو کی سیاست میں دلچسپی ہے۔ کل کا خطاب آصفہ کا آخری خطاب نہیں بلکہ آئندہ بھی آپ سنیں گے۔


ای پیپر