PDM meeting, Fazal-ur-Rehman, Yousaf Raza Gillani, Maryam Nawaz, Aseefa Bhutto
01 دسمبر 2020 (15:45) 2020-12-01

ملتان: جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہماری نظریں اب 13 دسمبر کے جلسے پر ہوں گی، تمام زمینی حقائق کو دیکھ کر جو فیصلہ ہوگا اس پر عمل کریں گے۔

یوسف رضا گیلانی کے ساتھ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ملتان کے عوام نے بھی سلیکٹڈ ٹولے کو مسترد کردیا ہے۔ پی ڈی ایم جلسہ کامیاب رہا، اہلیان ملتان کا مقروض رہوں گا۔ پی ڈی ایم اجلاس میں آئندہ کا جو بھی لائحہ عمل ہوگا وہ طے کیا جائے گا، اجلاس میں پی ڈی ایم قیادت جو بھی فیصلہ کرے گی اس پر عملدرآمد کیا جائے گا، حکومت کی رٹ ختم ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں تمام معاملات سے جو لاتعلق ہیں وہ عمران خان اور ان کے وزرا ہیں۔

سربراہ جمعیت علمائے اسلام ف نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کے بیٹوں نے قربانیاں دیں، جیل گئے، پی ڈی ایم کی تحریک آگے بڑھتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کے جلسے ان کی جدوجہد کا تسلسل ہیں۔ پی ڈی ایم عام آدمی کے حقوق کی جنگ لڑ رہی ہے۔

فضل الرحمان نے کہا کہ آگ لگنے سے متعلق معاملات کا علم نہیں اس پر بہت افسوس ہے، حکومت کو عوام نظر نہیں آتے تو جلسہ کیا نظر آئے گا؟ جہاں جی ڈی پی ساڑھے 5 فیصد تھا وہ 0.4 پر چلا گیا۔ جی ڈی پی کی اس گراوٹ کا ذمہ دار کون ہے؟ ملک میں آسمان کی حدوں کو چھوتی مہنگائی کا کون ذمہ دار ہے؟

انہوں نے کہا کہ حکومت سے کسی طرح کے مذاکرات فی الحال ممکن نہیں، ہمیں فلسطین کی آزادی کی بات کرنی چاہئے، قبلہ اول نبی پاک ﷺ کا مسلمانوں کو تحفہ ہے۔ قبلہ اول کی چابی صلاح الدین ایوبی نے مسلمانوں کو دی تھی۔ ہمیں اسرائیل کو تسلیم کرنے کا لفظ چھوڑ کر فلسطین کو تسلیم کرنے کی بات کرنی چاہئے۔ فضل الرحمان نے کہا کہ فلسطین مسلمانوں کی زمین ہے، اس پر اسرائیل نے قبضہ کر رکھا ہے۔ 1940 کی قرار داد میں ہے کہ اسرائیل کی بستیاں ناجائز ہیں۔ پاکستان فلسطین کے ساتھ ہے اور رہے گا۔ امت مسلمہ کو چاہئے فلسطین کو دنیا سے تسلیم کرانے کی بات کرے۔

انہوں نے کہا کہ خارجہ محاذ پر حکومت موجود نہیں ہے، کشمیر کو مودی کی جھولی میں ڈال دیا گیا ہے۔


ای پیپر