Source : Yahoo

معاشی بحران دور کرنے کیلئے تحریک انصاف کا انقلابی پروگرام
01 اگست 2018 (23:49) 2018-08-01

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما اور متوقع وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا ہے کہ ہمیں پاکستانی معیشت کی حالت کا اچھی طرح اندازہ ہے اور ہم اس چیلنج سے نمٹنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں، ہمیں بشمول آئی ایم ایف ہر آپشن پر غور کرنا ہو گا ، جو بھی پاکستان کے لئے بہتر ہوا وہی کرینگے ، قومی سلامتی کے معاملے پر ہم کوئی سمجھوتہ نہیں کرینگے .

ہمیں ایسے اقدامات کرنے ہیں کہ پاکستان ہمیشہ ہمیشہ کے لئے اپنے پاﺅں پر کھڑا ہو جائے ، آئی ایم ایف کے پاس تو ہم 12 دفعہ جا چکے ہیں مگر معاشی بحران کا حقیقی حل نہیں نکال پائے،سابق حکومت نجکاری کی چمپئن تھی مگر ناکام رہی، ہم اداروں کی کمزوریوں کو ٹھیک کرینگے ، پاکستان کے نوجوانوں کو روزگار دینگے ، مجھے فخر ہے ہماری پارٹی نے الیکشن میں روزگار دینے کا نعرہ لگایا ، ایک کروڑ نوکریاں بانٹی نہیں جائیں گی بلکہ ہاﺅسنگ کے شعبے سے پیدا کی جائیں گی، روپے کی قدر میں بہتری آنا اچھی بات ہے مگر کرنسی کا تیزی سے اوپر جانا یا نیچے آنا معیشت کے لئے ٹھیک نہیں ہوتا ۔

وہ بدھ کو نجی ٹی وی کو انٹرویو دے رہے تھے ۔ اسد عمر نے کہا کہ ہمیں پاکستانی معیشت کی حالت کا اچھی طرح اندازہ ہے اور ہم اس چیلنج سے نمٹنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں ۔ ہمیں بشمول آئی ایم ایف ہر آپشن پر غور کرنا ہو گا ۔ جو بھی پاکستان کے لئے بہتر ہوا وہی کرینگے ۔ انہوں نے کہا کہ قومی سلامتی کے معاملے پر ہم کوئی سمجھوتہ نہیں کرینگے ۔ ہمیں ایسے اقدامات کرنے ہیں کہ پاکستان ہمیشہ ہمیشہ کے لئے اپنے پاﺅں پر کھڑا ہو جائے ۔ آئی ایم ایف کے پاس تو ہم 12 دفعہ جا چکے ہیں مگر معاشی بحران کا حقیقی حل نہیں نکال پائے ۔ رہنما تحریک انصاف نے کہا کہ چینی سفیر کے ساتھ تفصیلی بات چیت ہوئی ۔ ہمارا مقصد ہے کہ ہر پانچ سال بعد ہمیں آئی ایم ایف کے پاس نہ جانا پڑے ۔ اداروں میں سیاسی مداخلت ختم کرنے اور ان میں بہتر لانے سے گردشی قرضے مزید نہیں بڑھیں گے ۔ اسد عمر نے کہا کہ معیشت کی بہتری کے لئے مہاتیر محمد کا فارمولا آزمائیں گے ۔ ٹاپ لیڈر شپ میں ریفارمز کے فیصلے ہفتوں میں ہوں گے ۔

معیشت کے اندر حکومت کا کام عوام کو سہولت فراہم کرنا ہے ۔ سہولت فراہم کرنے کے لئے اصل کام نجی شعبے کا ہوتا ہے ۔ ہم اکنامک کونسل اور بزنس ایڈوائزری کونسل تشکیل دینگے ۔ انہوں نے کہا کہ سابق حکومت نجکاری کی چمپئن تھی مگر ناکام رہی۔ ہم اداروں کی کمزوریوں کو ٹھیک کرینگے ۔ پاکستان کے نوجوانوں کو روزگار دینگے ۔ مجھے فخر ہے ہماری پارٹی نے الیکشن میں روزگار دینے کا نعرہ لگایا ۔ اسد عمر نے کہا کہ ایک کروڑ نوکریاں بانٹی نہیں جائیں گی بلکہ ہاﺅسنگ کے شعبے سے پیدا کی جائیں گی۔ روپے کی قدر میں بہتری آنا اچھی بات ہے مگر کرنسی کا تیزی سے اوپر جانا یا نیچے آنا معیشت کے لئے ٹھیک نہیں ہوتا ۔ اسٹاک مارکیٹ میں بھی بہتر آرہی ہے ۔


ای پیپر