سعودی عرب میں قید پاکستانیوں کی تعداد 3500 ہے
01 اپریل 2019 (18:13) 2019-04-01

اسلام آباد: سعودی عرب میں قید پاکستانیوں کی تعداد 3500 ہے ۔

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے اوورسیز پاکستانی اور انسانی وسائل کے حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ اس وقت دنیا بھر میں قید پاکستانیوں کی تعداد 10734ہے،جن میں صرف سعودی عرب میں قید پاکستانیوں کی تعداد 3500سے زائد جبکہ یو اے ای میں 2300قیدی موجود ہیں، زیادہ تر قیدہونے کی وجوہات میں قوانین سے لا علمی، زائد المعیاد ویزہ، چوری، قتل اور منشیات ہیں،2016-17میں اوورسیز پاکستانیوں کی شکایات 911ملیں جن میں سے 702کو حل کر دیا گیاجبکہ 2017-18میں 1951شکایات میں سے 793کا ازالہ کیا گیا۔

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے وزارت اوورسیز پاکستانی اور انسانی وسائل کے مطابق  او پی ایف کی عمارتوں سے وزارت کو پانچ کروڑ سالانہ کرایہ آتا ہے، اس وقت اسلام آباد کے علاوہ لاہور، کراچی ،پشاور میں او پی ایف کے آفسز موجود ہیں،حکام کے مطابق او پی ایف سکولوں میں اوورسیز پاکستانیوں کے بچوں کو فیس کی مد میں 50فیصد رعایت دی جاتی ہے، بیرون ملک او پی ایف کا کوئی سکول موجود نہیں، ملک میں چوبیس سکول موجود ہیں۔

 وزارت کو سالانہ دس کروڑ روپے کا خسارہ جبکہ اتنا ہی حکومت کی طرف سے سبسڈی دی جاتی ہے، وزارت سالانہ 45کروڑ روپے خرچ اور 5کروڑ آمدن آرہی ہے، حکام کے مطابق وزارت کی کل آسامیوں کی تعداد 2373ہے جن میں 1938پوسٹوں پر افراد موجود ہیں ،آفیسرز کی تعداد 168ہے جن میں سے 132خالی ہیں،سٹاف کی تعداد508جن میں سے 436خالی ہیں، وزارت کے اعلیٰ حکام نے قائمہ کمیٹی برائے اوورسیز کو بتایا کہ بیرون ملک اوورسیز مرنے والے کو 4 لاکھ روپے جبکہ معذور کو 3 لاکھ روپے دیتی ہے۔

 بیرون ملک موجود پاکستانیوں میں سے جو جتنا زیادہ سرمایہ اندرون ملک بھیجے گاانہیں اس ہی پیسوں کے حساب سے سلور گولڈ پلاٹینیم کارڈ دیئے جاتے ہیں جبکہ ملک کے 8ایئرپورٹس پر کاؤنٹرز ہیں وہاں پر انہیں ہر قسم کی سہولیات مہیا کی جاتی ہیں، وزارت کی آن لائن پورٹل کے ذریعے اوورسیز پاکستانی اپنی شکایات جن میں اووربلنگ، میٹر کا کٹ جانا اور جائیداد پر قبضے کی شکایت کی شکل میں وزارت ان کا مداوا کرتی ہے۔


ای پیپر